17

ڈیرہ اسماعیل خان، سفاک قاتل کو سزائے موت سزا،9لاکھ جرمانہ اور 75 سال قید

ڈیرہ اسماعیل خان (نیوز واچ) ایڈیشنل سیشن جج ڈیرہ شاکر اللہ خان نے ڈیرہ کے علاقہ ظفرآباد کالونی میں معصوم بچیوں کو زیادتی کا نشانہ بنا انہیں قتل کرنے والے انتہائی خطرناک سیریل کلر اور سفاک قاتل 20 سالہ محمد بلال کو مقدمات میں سزائے موت ،75 سال قید اور 9 لاکھ روپے جرمانہ کی سزا کا حکم جاری کردیا۔مجرم کو 10 سالہ بچی شمائلہ بی بی کو ریپ کے بعد قتل کے جرم میں سزائے موت، 25 سال قید سخت اور 6 لاکھ روپے جرمانے جبکہ 6 سالہ ریحانہ بی بی کو زیادتی کے بعد قتل کرنے کے دوسرے مقدمہ میں 50 سال قید سخت اور 3 لاکھ روپے جرمانہ کی سزا کا فیصلہ سنادیا۔دونوں اہم مقدمات کی سماعت سنٹرل جیل ڈیرہ میں کیمپ کورٹ کے دوران کی گئی اور سنٹرل جیل کے اندر ہی ان دونوں اہم مقدمات کا فیصلہ سنایا گیا۔ مجرم محمد بلال کو عدالت نے دو بچیوں 10 سالہ شمائلہ بی بی اور 6 سالہ ریحانہ بی بی کے ریپ اورقتل کی دفعات کے تحت سزا سنائی۔ عدالت نے 10 سالہ شمائلہ بی بی کے ریپ اور قتل میں تعزیرات پاکستان کے دفعہ 302 میں مجرم کو سزائے موت اور 5 لاکھ روپے عوضانہ اور جرم زیر دفعہ 376 ت پ میں 25 سال قید سخت اور ایک لاکھ روپے جرمانہ کی سزا سنائی۔ ان میں 5 لاکھ عوضانہ جو مجرم متاثرہ خاندان کو ادا کرے گا۔یاد رہے کہ تھانہ ٹاﺅن کی حدود ظفرآباد کالونی ڈیرہ میں 06 مئی 2014 کو 10 سالہ شمائلہ بی بی سودا سلف خریدنے کے لئے گھر سے باہر نکلی اور اچانک لاپتہ یوگئی جس کی تلاش کی گئی لیکن کوئی سراغ نہ مل سکا بعد ازاں بچی کی لاش قریبی اراضی فصل گنا میں ملی جسے زیادتی کے بعد گلے میں رسی کا پھندا ڈال کر اسے قتل کیا گیا تھا۔ بعد ازاں پولیس کی جانب سے بچی کا پوسٹ مارٹم بھی کرایا گیا ، جس کے بعد لاش کو ورثا کے حوالے کردیا گیا تھا۔پوسٹمارٹم رپورٹ کے مطابق بچی کو مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔ جبکہ دوسرے مقدمہ میں 25 فروری 2016 کو6 سالہ بچی ریحانہ بی بی گھر سے باہر نکلی اور پھر لاپتہ ہو گئی بعد ازاں اس کی قتل شدہ لاش ظفرآباد میں خالی پلاٹ کے اندر دفن شدہ پائی گئی جس کے ہاتھ اور پاﺅں باہر نکلے ہو ئے تھے۔اسے بھی زیادتی کے بعد قتل کیا گیا تھا۔ اس اہم مقدمہ میں عدالت نے سفاک قاتل اور سیریل کلر محمد بلال کو جرم زیر دفعہ 302 میں عمر قید اور 2 لاکھ عوضانہ جبکہ جرم زیر دفعہ 376 میں 25 سال قید اور 1 لاکھ جرمانہ کی سزا سنا دی ہے۔ تمام سزائیں یکجا شمار کی جائیں گی۔ دونوں مقدمات کی اہمیت کے پیش نظر ان کی سماعت سنٹرل جیل ڈیرہ میں کی گئی اوروہیں پر ہی مقدمات کا فیصلہ سنایاگیا۔ اس موقع پر عدالت کے سٹینو گرافر کاشف نواز اور نائب کورٹ سمیت دیگر سٹاف بھی موجود تھا۔یاد رہے کہ چند ماہ قبل ایڈیشنل سیشن جج ڈیرہ عثمان ولی خان نے مجرم محمد بلال کو 6 سالہ چچا زاد بہن ماہ نور کے ساتھ زیادتی کے بعد قتل کرنے کے جرم میں تین بار سزائے موت اور سات لاکھ روپے جرمانہ کی سزا سنائی جا چکی ہے جس کے خلاف مجرم نے عدالت عالیہ میں اپیل بھی دائر کر رکھی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں